• narrow screen resolution
  • wide screen resolution
  • fluid screen resolution
  • Increase font size
  • Default font size
  • Decrease font size
  • style1 color
  • style2 color
  • style3 color
بچت کا طریقہ کار

بچت کا طریقہ
آپ اپنی بچت کے لئے رسمی ،نیم رسمی، یا غیررسمی اداروں میں بشکل زر نقد یا غیر نقد کا انتخاب کر سکتے ہیں ۔ غیر نقدی کی بچت اقسام یہ ہیں ۔مثلاً


غیررسمی بچتیں
غیررسمی بچت گھر میں نقدی کی صورت پر مشتمل ہوتی ہے جس سے آپکی رقم باآسانی محفوظ ہو تی ہے اور باقاعدہ بچت اداروں میں لین دین کے اخراجات لاگو ہو تے رہتے ہیں اور یہ اس سے مہیا ہوتی ہے ۔ اس غیر رسمی بچتوں کے دو نمایاں نقصانات ہیں ۔
اس غیر رسمی بچتوں کے دو نمایاں نقصانات ہیں

  • آسانی سے خرچ ہونا اور چوری، ڈاکہ زنی کا خطرہ سر پر منڈلانا ۔
  • اس بار ے میں آپکو سخت نظم و ضبط رکھنا پڑتا ہے کہ اپنے آپ کو خرچ کرنے سے کس طرح بچایاجائے اور گھر کے دوسرے افراد کی خواہش کو دبایاجائے ۔
  • مزید برآں گھر میں جمع شدہ رقم کوئی فائدہ (منافع ؍ سود) نہیں دیتی اور وقت گزرنے سے قدر کھو دیتی ہے۔ جیسے اشیاء (سونا، مویشی و اراضی) اُسے بچت کا دوسرا طریقہ کہا جاتا ہے ۔
  • جنہیں اشیاء (سونا، مو یشی ، واراضی ) اسے رسمی بچت کا دوسرا طریقہ کہا جاتا ہے ۔

نیم رسمی بچتیں

غیرر سمی بچتیں ڈیپازٹ ،کلیکٹرز اور گروپ بچت پر ہوتی ہیں بشمول کریڈٹ کی گردش اور بچت ادارے جنہیں پاکستان میں کمیٹی جیسے دیہاتی کے بنک، استحکام گروپ اور اپنی مدد آپ گروپ کہا جاتا ہے ۔ ایک سادہ اور جانا پہچانا گروپ طریقہ کار جو ممبران میں نظم و ضبط ، جانچ پڑتال اور حمایت کی خوبیاں اُجاگر کر تا ہے ۔ کریڈٹ و بچت ادارے کا فائدہ یہ ہے کہ اس کا ہر رکن یکمشت ،یکبارگی رقم وصول کر تا ہے جس میں کوئی ادھار اور سود کی ادائیگی نہیں ہو تی ۔ تاہم اس میں ایک محدود یت یہ ہے کہ ممبر نے جو رقم بچت میں رکھی ہو تی ہے ۔ اُس پر زائد کچھ بھی نہیں ملتا ۔ اپنی مدد آپ گروپ کے ممبران اپنی مجموعی رقم سے قابل واپسی سود کے ساتھ وصول کر سکتے ہیں ۔ مگر وہ بھی متعینہ مدت میں حصص کی صورت میں۔
گروپ بچت کی حدیہ ہے کہ گروپ میں غیر پائیداری رکن کے مابین اختلافات اور رقم تک محدودرسائی کا عنصر شامل حال ہو تا ہے ۔

رسمی بچتیں
سے ہی اکارسمی بچت مالی اداروں سے وابستہ ہوتی ہیں ۔ یعنی بینک، ڈاکخانے ، مائیکر و فائنانس ادارے، کریڈٹ یونین اور کو آپریٹو ز۔ نقد بچت کی صورت میں یہ ہمہ گیر پیشکش کر تے ہیں ۔ عموماً ان مالی اداروں میں بچت رقم رکھنا محفوظ ہوتی ہے اور بار آور (فائدہ مند ) ہو تی ہے ۔ مالی ضروریات کے لحاظ سے انہیں مختلف بچت اکاؤنٹ پیشکش کر تے ہیں ۔
رسمی مالیاتی ادارے مختلف قسم کی بچت اسکیم پر متعارف کر تے ہیں ۔ باقاعدہ لین دین کیلئے انہوں نے ریگولر و پاس بک اکاؤنٹ کو زیادہ تر استعمال کر تے ہیں۔کیونکہ وقت اور رقوم کا جمع کرنا اور نکالنا سہل ہو تا ہے۔

اصولی طور پر آپ کو ہر ماہ کچھ مفت لین دین کی اجازت ہے اور زائد کیلئے اگر کوئی ہو تو فیس وصول کی جاتی ہے۔ اس متواتر لین دین سے پاس بک سیونگ اکاوئنٹ جس پر بینک قلیل سود ادا کر تی ہے ۔ پاس بکاکاونٹ کے لین دین کا جائز ہ لیا جاتا ہے اکاؤنٹ کو جاری رکھنے کیلئے کم از کم رقم جمع رہنا درکار ہو تی ہے ۔ جب آپ کوبا قاعدہ رقوم جمع کرنا اور نکالنا ہو تو یہ اکاؤنٹ مناسب ہے اور سہل تر ین بھی ہے ۔

معاہدات کے ذریعہ بچت کاری کرنا ایک متبادل طریقہ کار ہے جس میں آپ ایک مناسب رقم باقاعدگی سے طے شدہ مدت تک جمع کرانا ہو تی ہے ۔ پھر بھی معاہدہ کی بچت کاری کی کئی اقسام ہیں جس میں متعینہ مدت سے قبل رقم نکلوانے پر پابندی ہو تی ہے ۔ تاہم پیشگی نکالنے کی صورت میں جر مانہ (زائد چارج کرنا) دینا پڑتا ہے ۔ اگر آپ کی مسلسل آمدنی ہے تو یہ آپکے لیے مفید ہے ۔

جس میں ایک عرصے کے بعد آپ اپنے مقاصد کو پورا کر سکتے ہیں ۔ ایک وقت کیلئے متعینہ رقم جمع کراسکتے ہیں ۔ جس میں پہلے سے قوت و شرح سود طے کیا جاتا ہے ۔ پھر آپ اس رقم کو وقت سے پہلے نہیں حاصل کر سکتے اور یہ اسکیم ریگولر اور کنٹریکچل بچت کی بہت زیادہ شرح سود دیتی ہے ۔ آپ کو اگر یکمشت رقم حاصل ہوئی اور اسکی فوری ضرورت نہ ہو تو یہ اکاؤنٹ آپ کیلئے مناسب ہے۔ آپ یہ رقم ایک مدت کیلئے علیحدہ رکھ چھوڑتے ہیں اور یہ آپ کیلئے زیادہ سے زیادہ شرح سود دیتی ہے اور آئندہ کے مقاصد کی اس سے تکمیل کر سکتے ہیں ۔ یہ آپ ہی کی مرضی پر مخصر ہے کہ آپ اس کو کتنے عرصے محدود کر سکتے ہیں اور کب آپ کو اسکی ضرورت پڑے گی ۔

ایک وقت تک کیلئے جمع شدہ رقم کی مختلف معیاد چھ ماہ تا 5سال تک ہوتی ہیں ۔ توحقیقتاًایک لمبے عرصے کیلئے آپ رقوم محفوظ کرینگے تو شرح سود زیادہ ہو گی ۔