• narrow screen resolution
  • wide screen resolution
  • fluid screen resolution
  • Increase font size
  • Default font size
  • Decrease font size
  • style1 color
  • style2 color
  • style3 color
آپ کتنے قرضے کی استطاعت رکھتے ہیں

آپ کتنے قرضے کی استطاعت رکھتے ہیں ؟
زیادہ قرضہ شدید مسائل پیدا کر سکتا ہے ۔ زیادہ قرضے سے مراد گھریلو قرضہ ہے ۔ جو کہ آمدن سے بہت زیادہ ہو گیا ہو۔ آپ کسطرح اعداد وشمار کرینگے کہ کتنا قرضہ زیادہ کہلاتا ہے؟ بد قسمتی سے ایک محفوظ قرض و آمدن کا تناسب کا کوئی ضابطہ نہیں ہے ۔ اگر چہ 20 تا 30فی صد گھر یلو آمدن بخوبی استعمال ہو جا تی ہے ۔


کیا آپ کا گھرانہ بیک وقت ایک قرضہ سے ہمیشہ احتراز کر تا ہے ؟
خصوصی طور کوئی ضروری نہیں اگر آپ کو ایک حال بحران کا سامنا ہو اور رقم کی اشد ضرورت ہو ۔قرضہ حاصل کرنے سے قبل آپ فیس اخراجات و ممکنہ خطرات دونوں کو ملحوظ خاطر رکھیں ۔ اپنے خود حالات کو پیش نظر رکھ کر مندرجہ ذیل سوالات کے جوابا ت دیں

  • کتنی فی صد رقم اپنے گھر یلو ؍ کاروباری مصارف کے بجٹ سے پس انداز کر کے قرضہ کی واپسی کر سکتے ہیں ؟
  •  کیا میرا ضمانتی اسطاعت رکھتا ہے کہ وہ میرا قرضہ واپس کر سکے ؟
  • اگر میں اپنا قرضہ واپس نہ کر سکا تو اسکے کیا نتائج ہو نگے ؟
  • میری ضمانت کی اشیاء (مثلاً ایک موٹر بائیک، گھر یلوسامان وغیرہ ) کی کیا مالیت ہے جو میں نے گرہن رکھی ہے ؟

قرض کو اپنی بساط میں رکھیں
آج کل دنیا بھر کے شہری جوان کر یڈٹ کارڈ کے مقروض ہیں ۔ بظاہر اسے ہم آسانی سے انفو گراف سمجھ سکتے ہیں اور ماھر مشاورت دیتے ہیں کہ اسے کسطرح بہتر و منظم کیا جا سکتا ہے ۔ دیکھئے کریڈٹ کا رڈ بنوانا۔ بطور قرض خواہ کے قرضہ آپکو اپنے شکنجے میں لے سکتا ہے۔ کیونکہ یہ عمل آہستگی سے ہورہا ہوتا ہے آپ اسے نہیں دیکھ سکتے ۔ اچانک آپ اپنی بساط سے بڑھ گئے ہیں تو کیا اس سے نکلنے کا کوئی راستہ نظر آتا ہے


قرضہ سے چمٹے رہنے کا ایک پہلو یہ ہے کہ اس سے غربت کی حالت میں ہی رہتے ہیں ۔ ہم میں سے اکثر قرض کے ساتھ گزر بسر ہمیشہ رواں دواں ہو تی ہے اور یہ ایک حقیقت کا روپ ڈھار لیتی ہے ۔

کیونکہ اصل میںآپ کا ادھار اس طرح نہ رفع ہو گا جب تلک آپ موجودہ قرضہ پر نظر ثانی نہ کریں ۔ درحقیقت بدلتی حال میں بعض اوقات آپ کو ایک سے زیادہ قرضہ کی ضرورت پیش آجا تی ہے ۔ یہ صورتحال تب ہو تی ہے کہ جب اچانک بحران پیدا ہو جائے اور رقم کی اشد ضرورت ہو ۔


کیا آپ موجودہ قرضہ کی منصوبہ بندی کر تے ہیں یا ایک دوسرے قرضہ کو ترجیح دیتے ہیں جسکی آپ استطاعت رکھتے ہو ۔ یہ یقین کر لیں کہ قرض کے بوجھ سے آپکی زندگی مفلوج تو نہیں ہو جاجیگی ۔ یعنی آپ اپنی گھریلو ضروریات زندگی کی اشیاء روزمرہ کے اخراجات پورے کر تے ہوئے قرضہ کی ادائگیے جلدی رکھ سکتے ہیں ۔


دو سادہ قواعد جو آپکے قرضہ کو حد میں رکھ سکتے ہیں

 ایک سے زیادہ قرض کا بوجھ نہ اٹھائیں جسکی واپسی کی آپکو استطاعت نہ ہو ۔
ا۔ خطرے کی علامات جب قرضہ حد سے تجاوز کر جائے ۔
ب۔ کریڈٹ کارڈ کا استعمال کی نوبت آنا یعنی اس سے قبل اشیاء آپ نقد روپے پر خریدا کر تے تھے ۔
پ۔ قرضہ لینا یا قرضہ کی معیاد میں تو سیع کرانا۔
ت۔ بچت کا شروع کرنا اس بناء پر کہ قرضہ چکایا جائے ۔
فوری طلب کے لیے رقم بچائیں تاکہ آپ کو ہمشہ مانگنا نہ پڑے

تاکید رہے

 قرضہ جات کی ادائیگی آپکی مستقل آمدنی سے کسی بھی فی صد صورت میں تجاوز نہ کر ے ۔
ا۔ اپنی ذاتی مصرف کے لیے خرچہ محدود رکھیں ۔
ب۔ قرضہ کی ادائیگی کیلئے ایک منصوبہ اختیار کریں ۔ تاکہ اگر قرضہ کی تاریخ میں وقت ہوتو اسے پیداواری کام میں لگایا جائے۔تاکہ منافع حاصل ہو ۔
  پ ۔ قرضہ چکانے کی آپ کے بنیادی اخراجات مثلاً خوراک و اجناس ، اسکول فیس یا دیگر خریداری منافع نہ ہو ۔
  ت۔ اپنے واجب الادا قرضہ ،اقساط کی رقم و مدت تاریخ کو نظر میں رکھتے رہا کریں ۔

ایک نصیحت
قرضہ دشمن نہیں اصل میں بُری خصلت ادھار کی ہے ۔